sad faiz ahmed faiz poetry
|

Faiz Ahmed Faiz Poetry: Best 50+Heart Touching Faiz Ahmed Faiz Poetry In Urdu – PoeticExplorers

Spread the love

Faiz Ahmed Faiz Poetry In Urdu,

In this blog post we have gathered some beautiful collection of heart touching faiz ahmed faiz poetry. Read the best faiz poetry in Urdu and share them with your friends and your loved-one.

Faiz Ahmed Faiz was a highly influential Urdu poet, and his contributions to literature are best understood through the prism of his poetry. Born in 1911 in India during a period of tumultuous change, Faiz Ahmed Faiz’s poetry, often simply referred to as “Faiz Ahmed Faiz poetry,” served as a poignant reflection of the hardships and injustices of his time.

In the early stages of his poetic journey, “Faiz Ahmed Faiz poetry” predominantly revolved around themes of love and romance. However, as societal challenges mounted, his verses underwent a significant transformation. “Faiz Ahmed Faiz poetry” began to delve into the realms of pain and the yearning for a more equitable and just world.

People May Also Like…….

* Best Faiz Ahmed Faiz Poetry In Urdu 2 Lines Text.

faiz ahmed faiz poetry
faiz ahmed faiz poetry

ایک طرزِ تغافل ہے سو وہ ان کو مبارک
ایک عرضِ تمنا ہے سو ہم کرتے رہیں گے

Ek tarz-e-taghafuul hai so woh un ko mubarak
Ek arz-e-tamanna hai so hum karte rahenge

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

heart touching faiz ahmed faiz poetry
heart touching faiz ahmed faiz poetry

اور بھی دکھ ہیں زمانے میں محبت کے سوا
راحتیں اور بھی ہیں وصل کی راحت کے سوا

Aur bhi dukh hain zamanay mein mohabbat ke siva
Rahatein aur bhi hain wasl ki raahat ke siva

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

Faiz Ahmed Faiz Poetry

faiz ahmed faiz poetry in urdu
faiz ahmed faiz poetry in urdu

دونوں جہاں تیری محبت میں ہار کے
وہ جا رہا ہے کوئی شبِ غم گزار کے

Dono jahan teri mohabbat mein haar ke
Woh ja raha hai koi shab-e-gham guzaar ke

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

* heart touching faiz ahmed faiz poetry In Urdu 2 Lines.

Faiz Ahmed Faiz Poetry 3

آئے تو یوں کہ جیسے ہمیشہ تھے مہربان
بھولے تو یوں کہ گویا کبھی آشنا نہ تھے

Aaye to yun ke jaise hamesha the meharban
Bhule to yun ke goya kabhi aashna na the

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

faiz ahmed faiz poetry in urdu 2 lines

faiz ahmed faiz poetry in urdu 2 lines
faiz ahmed faiz poetry in urdu 2 lines

مقامِ فیض کوئی راہ میں جچا ہی نہیں
جو کوئے یار سے نکلے تو سوئے دار چلے گئے

Maqaam Faiz koee raah mein jacha hee naheen
Jo ko e yar say niklay to sue daar chalay gaye

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

sad faiz ahmed faiz poetry
sad faiz ahmed faiz poetry

کب ٹھہرے گا درد اے دل، کب رات بسر ہوگی
سنتے تھے وہ آئیں گے سنتے تھے سحری ہوگی

Kab thehre ga dard ai dil, kab raat basar hogi
Sunte the woh aayenge sunte the sehri hogi

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

* Top Sad Faiz Ahmed Faiz Poetry In Urdu Copy Paste.

کب ٹھہرے گا درد اے دل، کب رات بسر ہوگی
سنتے تھے وہ آئیں گے سنتے تھے سحری ہوگی

Kab thehre ga dard ai dil, kab raat basar hogi
Sunte the woh aayenge sunte the sehri hogi

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

وہ بات سارے فسانے میں جس کا ذکر نہ تھا
وہ بات ان کو بہت ناگوار گزری ہے

Woh baat saare fasane mein jiska zikr na tha
Woh baat un ko bohat na-gawar guzri hai

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

زندگی کیا کسی مفلس کی قبا ہے جس میں
ہر گھڑی درد کے پیوند لگے جاتے ہیں

Zindagi kya kisi maflis ki qaba hai jis mein
Har ghadi dard ke pyaunde lage jaate hain

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

آپ کی یاد آتی رہی رات بھر
چاندنی دل دکھاتی رہی رات بھر

Aap ki yaad aati rahi raat bhar”
Chandni dil dikhati rahi raat bhar

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

نہیں نگاہ میں منزل تو جستجو ہی سہی
نہیں وصال میسر تو آرزو ہی سہی

Nahi nigaah mein manzil to justuju hi sahi
Nahi wisaal munsar to aarzu hi sahi

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

heart touching faiz ahmed faiz poetry

دونوں جہاں تیری محبت میں ہار کے
وہ جا رہا ہے کوئی شبِ غم گزار کے

Dono jahan teri mohabbat mein haar ke
Woh ja raha hai koi shab-e-gham guzaar ke

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

گر بازیِ عشق کی بازی ہے جو چاہو لگا دو ڈر کیسا
گر جیت گئے تو کیا کہنا، ہارے بھی تو بازی مات نہیں

Gar baazi-e-ishq ki baazi hai jo chaho laga do dar kaisa
Gar jeet gaye to kya kehna, hare bhi to baazi maat naheen

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

ہم پرورشِ لوح و قلم کرتے رہیں گے
جو دل پہ گزرتی ہے رقم کرتے رہیں گے

Hum parwarish-e-loh-o-qalam karte rahenge
Jo dil pe guzarti hai raqam karte rahenge

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

دل ناامید تو نہیں ناکام ہی تو ہے
لمبی ہے غم کی شام ہی تو ہے

Dil naumeed to nahe nakaam hi to hay
Lambi hay gham ki sham hi to hay

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

* Best heartbroken deep faiz ahmed faiz poetry In Urdu.

کر رہا تھا غم جہاں کا حساب
آج تم یاد بے حساب آئے

Ker raha tha ghum jahan ka hisab
Aaj tum yad behisab aye

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

اور دیکھنے کو باقی ہے
آپ سے دل لگا کے دیکھ لیا

Aur dekhanay ko baki hay
Aap say dil laga k dekh lia

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

دونوں جہاں تیری محبت میں ہار کے
وہ جا رہا ہے کوئی شبِ غم گزار کے

Donu jahan tere muhabbat may haar k
wo ja raha hay koi shab ghum guzaar k

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

تمہارے یاد کے جب زخم بھرنے لگتے ہیں
کسی بہانے تمہیں یاد کرنے لگتے ہیں

Tumare yad k jab zakham bernay lagtay hay
Kisi bahanay tumay yad kernay lagtay hay

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

نہیں نگاہ میں منزل تو جستجو ہی سہی
نہیں وصال میسر تو آرزو ہی سہی

Nahe nigah may manzil to justuju hi sahi
Nahe wisaal muyassir to arzoo hi sahe

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

وہ بات سارے فسانے میں جس کا ذکر نہ تھا
وہ بات ان کو بہت ناگوار گزری ہے

Wo bat saray fasanay may jis ka ziker na tha
Wo bat un ko bohat nagawar guzre

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

گلو میں رنگ بھرے باد نو بہار چلے
چلے بھی آؤ کہ گلشن کا کاروبار چلے

Gulu may rang bharay bad e no bahar chalay
Chalay b ayo k ghulshan ka karobaar chalay

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

کب ٹھہرے گا درد اے دل کب رات بسر ہوگی
سنتے تھے وہ آئیں گے سنتے تھے سحری ہوگی

Kab theray ga dard ay dil kab raat baser ho ge
Suntay thay wo aye gay suntay thay sehar ho ge

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

آئے تو یوں کہ جیسے ہمیشہ تھے مہربان
بھولے تو یوں کہ گویا کبھی آشنا نہ تھے

Ayay to yu k jaisay hamaisha thay meharban
Bhoolay to yu k goya kabi ashna na thay

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

زندگی کیا ہے کسی مفلس کی قبا ہے جس میں
ہر گھڑی درد کے پیوند لگے جاتے ہیں

Zindgi kya hay kisi muflis ki kaba hay jis may
Her ghare dard k pehwand lagay jatay hay

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

وہ آ رہے ہیں وہ آتے ہیں وہ آ رہے ہوں گے
شب فراق یہ کہہ کر گزار دی ہم نے

Wo a rahay hay wo aatay hay wo aa rahay ho gay
Shab e farak yeh keh ker guzaar di hum nay

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

نہ جانے کس کے لیے امید وار بیٹھا ہوں
اک ایسے راہ پہ جو تیری رہ گزر بھی نہیں

Na janay kis k leye umeedwaar behta hu
Ik aise rah pay jo tere reh guzar b nahe

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

جانتا ہے کہ وہ نہ آئیں گے
پھر بھی مصروف انتظار ہے دل

Janta hay k wo na aye gay
Phir b masroof e intizaar hay dil

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

یہ آرزو بھی بڑے چیز ہے مگر ہمدم
وصال یار فقط آرزو کی بات نہیں

Yeh arzoo b bare cheez hay mager humdam
Wisal e yar fakat arzu ki bat nahe

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

اٹھ کر تو آ گئے ہیں تیرے بزم سے مگر
کچھ دل ہی جانتا ہے کہ کس دل سے آئے ہیں

Uth ker to a gaye hay tere bazam say mager
Kuch dil hi janta hay k kis dil say ayay hay

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

اک فرصت گناہ ملی وہ بھی چار دن
دیکھے ہیں ہم نے حوصلے پروردگار کے

Ik fursat e guna mili wo b chaar din
Daikhay hay hum nay hoslay perwerdigaar k

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

sad faiz ahmed faiz poetry

یہ داغ داغ اجالا یہ شب گزیدہ سحر
وہ انتظار تھا جس کا یہ وہ سحر تو نہیں

Yeh dagh dagh ujala yeh shab e gazida sehar
Wo intizar tha jis ka yeh wo sehar to nahe

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

آئے کچھ ابر کچھ شراب آئے
اس کے بعد آئے جو عذاب آئے

Ayay kuch aber kuch sharab ayay
Us k bad ayay jo azab ayay

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

تیرے کول و قرار سے پہلے
اپنے کچھ اور بھی سہارے تھے

Teray kol o karar say pehlay
Apnay kuch aur b saharay thay

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

بےدم ہوئے بیمار دوا کیوں نہیں دیتے
تم اچھے مسیحا ہو شفا کیوں نہیں دیتے

Baydam huey bimaar dawa kyu nahe daitay
Tum achay maseeha ho shifa kyu nahe daitay

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

سارے دنیا سے دور ہو جائے
جو ذرا تیرے پاس ہو بیٹھے

Sare dunyia Say door ho jaye
Jo zara teray pass ho baithay

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

جب تجھے یاد کر لیا صبح مہک مہک گئی
جب تیرا غم جگا لیا رات مچل مچل گئی

Jab tujay yad ker lia suba mehk mehk gaye
Jab tera gham jaga lia raat machal machal gaye

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

romantic faiz ahmed faiz poetry

رات یوں دل میں تیری کھوئی ہوئی یاد آئی
جیسے ویرانے میں چپکے سے بہار آ جائے

Raat yu dil may tere khoi hue yad aye
Jaisay weeranay may chupkay say bahar a jaye

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

فیض تھے راہ سر بسر منزل
ہم جہاں پہنچے کامیاب آئے

Faiz the rah ser baser manzil
Hum jaha ponchay kamayab ayay

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

میرے خاموشیوں میں لرزا ہے
میرے نالوں کی گمشدہ آواز

Mere khamoshiyu may lerza hay
Meray nalu ki gumshuda awaz

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

دل سے تو ہر معاملہ کر کے چلے تھے صاف ہم
کہنے میں ان کے سامنے بات بدل بدل گئی

Dil say to her mamla ker k chalay thay saaf hum
Kehnay may un k samnay bat badal badal gaye

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

اب اپنا اختیار ہے چاہے جہاں چلے
رہبر سے اپنی راہ جدا کر چکے ہیں ہم

Ab apna ikhtiyar hay chahay jaha chalay
Rehber say apni rah juda ker chukay hay hum

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

شام فراق اب نہ پوچھ آئے اور آ کے تل گئے
دل تھا کہ پھر بہل گیا جان تھی کہ پھر سنبھل گئے

Sham e farak ab na pooch aye aur aa k tal gae
Dil tha k phir behal gaya jan thi k phir sabal gae

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

جدا تھے ہم تو میسر تھیں قربتیں کتنی
بہم ہوئے تو پڑی ہیں جدائیاں کیا کیا

Juda thay hum to muyassir the kurbatay kitni
Baham hue to pari hay judaiya kya kya

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

کٹے بھی چلو بھرتے بھی چلو بازو بھی بہت ہیں سر بھی بہت
چلتے بھی چلو کہ اب دیرے منزل ہی پہ ڈالے جائیں گے

Kattay b chalo bhartay b chalo bazu b bohat hay sir b bohat
Chaltay b chalo k ab deeray manzil hi pe dalay jaye gay

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

خیر دوزخ میں میں ملے نہ ملے
شیخ سب سے جان تو چھوٹے گی

Kher dozakh may meh milay na milay
Sheikh sab say jan to chootay gi

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

اگر شعر ہے تو بھڑکے جو پھول ہے تو کھلے
طرح طرح کی طلب تیرے رنگ لب سے ہے

Ager sherer hay to bharkay jo phool hay to khilay
Tara tara ki talab teray rang lab say hay

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

منت چارہ ساز کون کرے
درد جب جہاں نواز ہو جائے

Minat charasaaz kon karay
Dard jab jah nawaz ho jaye

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

faiz ahmed faiz poetry in urdu

ادائے حسن کی معصومیت کو کم کر دے
گنہگار نظر کو حجاب آتا ہے

Adaye husan ki masoomiat ko kam ker day
Gunahgaar nazar ko hijab aata hay

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

تیز ہے آج درد دل ساقی
تلخی میں کچھ تیز تر کر دے

Tez hay aaj dard dil saki
Talkhi may ko tez ter ker day

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

غم جہاں ہو رخ یار ہو کہ دست عدو
سلوک جس سے کیا ہم نے عاشقانہ کیا

Gham e jahan ho rukh e yar ho k dast e adu
Salook jis say kia hum nay ashkana kia

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

ہم سہل طلب کون سے فریاد تھے لیکن
اب شہر میں تیرے کوئی ہم سا بھی کہاں ہے

Hum sehal talab kon say faryad thay laikin
Ab sher may teray koi hum sa b kaha hay

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

پھر نظر میں پھول مہکے دل میں پھر شامیں جلیں
پھر تصور نے لیا اس بزم میں جانے کا نام

Phir nazar may phool mehkay dil may phir shamay jale
Phir tasawer nay lia us bazam may janay ka naam

♦─━━━━━━⊱✿⊰━━━━━━─♦

Conclusion.

In summary, the poetry of Faiz Ahmed Faiz is a profound testament to the enduring influence of words in shaping our world and motivating transformation. Faiz Ahmed Faiz, a poet of great significance, used his verses to reflect the tumultuous times he lived through. His Faiz Ahmed Faiz poetry evolved from themes of love to powerful pleas for justice and equality.

His words not only beautifully captured the pain and hope of his era but also became a rallying cry for those who wished to express their feelings and challenge injustice. Beyond his role as a poet, Faiz was a visionary thinker and a dedicated advocate for fairness and the marginalized. His words, interwoven within Faiz Ahmed Faiz poetry remain as impactful today as they were in his lifetime. They remind us of the enduring power of literature to inspire change and guide us towards a more just and compassionate world.

Similar Posts

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *